Home / Entertainment / بچے بستر پر پیشاب کیوں کرتے ہیں؟

بچے بستر پر پیشاب کیوں کرتے ہیں؟

چھوٹے بچوں میں ،بستر پرپیشاب کا نکل جانا ایک عام بات ہے۔ یہ پانچ سال کی عمر تک کے 10 بچوں میں سے ایک کو ہوتا ہے اور 15سال کی عمر تک کے نوجوان بچوں میں کم ہو کر تعداد 100 میں 2 کی رہ جاتی ہے۔

غیر ارادی طور پررات میں پیشاب کا نکلنا بچے کے بڑھنے کا ایک عام عمل ہے۔ ہر بچہ اپنے مثانے پر کنٹرول کا مختلف پیمانہ رکھتا ہے۔ 3 سال کی عمر تک بہت کم بچے ہوتے ہیں۔

جن کا بستر خشک رہتاہے۔ زیادہ تر بچے 3 سے 8 سال کی عمرتک بستر کو خشک رکھنا شروع کر دیتے ہیں۔ جب تک آپ کا بچہ اس منزل تک نہ پہنچ جائے آپ کو بڑے صبرو تحمل کا مظاہرہ کرناہو گا اور بچے کا حوصلہ بڑھانا ہوگا۔بستر پر پیشاب نکلنے کی چند ایک وجوہات درج ذیل ہیں۔

* زیادہ تر آپ کے بچے کا پیشاب اس وقت نکلتا ہے۔ جب وہ گہری نیند سو رہاہوتا ہے اور اٹھنا نہیں چاہتا۔* یہ چیز زیادہ تر مورثی ہوتی ہے اگر آپ بچپن میں بستر گیلا کرتے تھے تو بہت ممکن ہے کہ آپ کا بچہ بھی کرے گا بہت کم معاملات میں ایساہوتاہے کہ اس کی وجہ ذیابیطس ہوتی ہے یا پھر پیشاب کی نالی میں نقص ہو سکتاہے،

لیکن اس سے صرف رات کو ہی بستر گیلا نہیں ہوتا،اس کی علامات دن تک محیط ہوتی ہیں۔ اگر دن میں کوئی علامات ظاہر نہیں ہوتیں تو اس کا مطلب ہے کہ آپ کا بچہ بالکل تندرست ہے۔ جذباتی ہونا یا پھر مضطرب رہنا، نئے گھر میں شفٹ ہونا یا بہن بھائیوں کے ساتھ برتاؤ ، بچے کی خوداری کا مجروح ہونا،

اگر بچے کا علاج یہ سمجھ کر کیا جائے کہ یہ اس کامسئلہ ہے۔ جبکہ مسئلہ صرف لانڈری دھونے کا ہوتاہے۔ا س سے یہ ردعمل بچے میں پیداہو سکتا ہے۔بچے کے بستر کی چادریں دھو دھو کر تنگ آنے پر بچے کو سزا دینے

اور بے عزت کرنے کی بجائے اسے یقین دلائیں کہ یہ ہرگز اس کی غلطی نہیں ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ سب ٹھیک ہو جائے گا۔آپ کے بچے کو ضرورت ہے کہ آپ اسے سمجھیں اور اسکی ہمت بڑھائیں۔

نہیں پوچھتے کہ ناچنا کب تک ہے اور رقص کیسا ہے؟ مداری جانتا ہے کہ یہ تماشا ختم ہوا تو اس کا روزگار بھی جاتا رہے گا

About welivenews@4949

Check Also

سورۃ اخلاص کا ایک چھوٹا سا عمل

اگر کوئی مسلمان قرآن پاک پڑھنا نہیں جانتا تو سب سے پہلے قرآن پاک پڑھنا …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *